u کراچی کی تاریخی ماہی گیر بستیاں پانی جیسی بنیادی سہولت سے بھی محروم | ٹی این این Share Button" />
Published On: Wed, Sep 30th, 2015

کراچی کی تاریخی ماہی گیر بستیاں پانی جیسی بنیادی سہولت سے بھی محروم

پریس رلیز

کراچی : پاکستان فشر فوک فورم کی طرف سے ابراہیم حیدری میں پانی کی قلت اور غیر قانونی طور پر واٹر ہائڈرنٹ قائم کرکے پانی کی فروخت کیخلاف سچل ہال سے واٹر پمپ مین روڈ تک ایک ہزار سے زائد لوگوں پر مشتمل احتجاجی ریلی نکالی گئی۔

ریلی کی قیادت پاکستان فشر فوک فورم کے مرکزی چیئرمین محمد علی شاہ، جنرل سیکریٹری سعید بلوچ، کراچی ڈویژن کے صدر مجید موٹانی، آصف علی شاہ و دیگر کر رہے تھے۔ اس موقع پر احتجاجی ریلی ابراہیم حیدری کے مختلف محلوں، بازاروں اور چوراہوں سے ہوتی ہوئی واٹر پمپ مین روڈ تک پہنچی، جہاں احتجاجی ریلی کے شرکاء کڑی دھوپ میں دھرنا دیکر بیٹھ گئے۔

ریلی میں شریک مظاہرین کے ہاتھوں میں بینر اور پلے کارڈز تھے اور وہ پانی نہیں کیوں بھلا، کربلا کربلا، غیر قانونی واٹر ہائڈرنٹ بند کرو، ٹینکر مافیا مردہ باد کے فلک شگاف نعرے لگا رہے تھے۔

اس موقع پر مظاہرین کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے پاکستان فشر فوک فورم کے مرکزی چیئرمین محمد علی شاہ نے کہا کہ ابراہیم حیدری ماہی گیروں کی وہ قدیم بستی ہے جس نے روشنیوں کے شہر کراچ کو جنم دیا، لیکن اس کے باوجود ابراہیم حیدری کو پانی کی بنیادی سہولت سے بھی محروم رکھا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایک بااثر شخصیت ایم اے طارق نے سندھ حکومت اور واٹر بورڈ عملداروں کو بھاری رشوت دیکر ابراہیم حیدری میں غیر قانونی واٹر ہائڈرنٹ قائم کرلیا ہے اور مذکورہ واٹر ہائڈرنٹ میں 30 لاکھ گیلن سے زائد مقدار میں پانی جمع کرنے کی گنجائش رکھی گئی ہے، جس کی وجہ سے علاقہ مکینوں کیلئے آنے والا پانی چوری کر کے ٹینکر مافیا کو فروخت کیا جارہا ہے، جس کی وجہ سے مقامی لوگ پانی جیسی نعمت سے محروم ہوگئے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ابراہیم حیدری 52 محلوں اور ڈیڑھ لاکھ سے زائد آبادی پر مشتمل ہے، جبکہ گوٹھ کے 40 سے زائد محلوں میں پانی کی فراہمی مکمل طور پر بند ہے۔ انہوں نے انتباہ کرتے ہوئے اعلان کیا کہ اگر 48 گھنٹوں کے دوران غیر قانونی طور پر قائم واٹر ہائڈرنٹ کو مکمل طور پر بند نہیں کیا گیا تو ہم ابراہیم حیدری کے مکین واٹر ہائڈرنٹ کو خود ہی مسمار کردیں گے اور اس کی ذمہ داری سندھ حکومت اور واٹر بورڈ انتظامیہ پر ہوگی۔

اس موقع پر کراچی ڈویژن کے صدر مجید موٹانی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ابراہیم حیدری کے 40 سے زائد محلوں میں پانی کی قلت کا سلسلہ 1990ء سے جاری ہے اور مسلسل 25 سال گذر جانے کے باوجود بھی مذکورہ متاثر محلوں کو پانی نہیں پہنچایا جاتا۔ انہوں نے کہا کہ اگر ایم اے طارق کی طرف سے غیر قانونی طور پر قائم کردہ واٹر ہائڈرنٹ بند نہیں کیا گیا تو ہم سب مل کر اس کا گھیراؤ کریں گے۔

اس موقع پر سعید بلوچ، فاطمہ مجید، ایوب شان، طالب کچھی و دیگر نے خطاب کیا۔

Share Button
Print Friendly, PDF & Email

Leave a comment

XHTML: You can use these html tags: <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>

Connect with us on social networks

گوگل پلس